اپنی باطنی زندگی کو دوسرے کے ظاھری زندگی سے موازنہ نہ کرو !

اپنی باطنی زندگی کو دوسرے کے ظاھری زندگی سے موازنہ نہ کرو !

کیا اب تک کسی کو دیکھا ھے کہ نھایت معمولی سی زندگی گزار رھا ھو لیکن اس کا دل شاد و خوشحال ھو۔ اور ایک شخص دولت سے مالا مال ھو مگر افسردہ ومضطرب ھو ؟

اس کا مطلب یہ کہ جو چیز سکون عطا کرتی ھے وہ دولتِ و قدرت نھیں ھے

سکون در اصل خدا سے عاشقانہ رابطہ برقرار کرنے میں ھے !

کیا ھم تیار ھیں کہ خدا سے عاشقانہ رابطہ شروع کریں ؟

اسی طرح کی نوکریاں
تبصرے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔